غموں کے ٹھیکیدار

A must read for a good laugh!

offbeamthoughts

کچھ لوگ غموں کے سیلزمین ہوتے ہیں. ان کا کام بس غم بیچنا اور غموں کا پرچار کرنا ہوتا ہے. ان خواتین و حضرات کا ضمیر انھیں اس بات کی اجازت ہی نہیں دیتا کے کسی کو سکون سے خوشی مناتا دیکھ سکیں

حدیث شریف کا مفہوم ہے

برائی کو اپنے ہاتھ سے روکو اور اگر اسکی استطاعت نہ رکھتے ہو تو زبان سے برا کہو اور اگر اتنا بھی نہ کر سکو تو دل میں برا جانو اور یہ ایمان کا کمزور ترین درجہ ہے.

مسلہ یہاں یہ ہے کہ ان غم کے ٹھیکیداروں نے اس حدیث میں جو برائی کا مفہوم سمجھا ہے وہ “خوشی” ہے. واللہ علم میں وثوق سے تو نہیں کہہ سکتا پر اپنے ناقص مشاہدے سے اسی نتیجے پر پہنچا ہوں کہ ان بیچاروں نے خود پر تو خوشی حرام کر ہی لی ہے اگر کوئی اور بھی خوشی مناتا نظر آجاے تو پیٹ…

View original post 729 more words

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s